آگ سے کہیلتے ہیں وہ لوگ جو منبر پر شیعت کے عقائد پر ضرب لگاتے ہیں ۔ علامہ محمد شفا نجفی


02/17/2018

بھٹ شاھ: اصغریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن  پاکستان کے  ۴۷ واں مرکزی کراہیان کربلا و عاشقام مھدیؑ کنونشن میں  خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وقت کا اہم تقاضہ یہ ہے کہ مومنین ، بین الاقوامی اور ملکی سطح پہ مکتب اھلبیت ؑ کے خلاف ہونے والی سازشوں کو سمجھیں اور اس کے خلاف حکمت عملی اختیار کرکے شریعی ،اخلاقی زمہ داری ادا کریں، آگ سے کھیلتے ہیں وہ لوگ جو منبر پر شیعت کے عقائد پر ضرب لگاتے ہیں اور لوگوں کو گمراہ کرتے ہیں

جو شخص خدائی امور کی نسبت مولا علیؑ کی طرف دے وہ امیر المومنین پر تہمت اور الزام لگاتاہے

جو آدمی اپنے ہاتھ سے امیرالمومنین کی فضائل میں ایک بھی روایت لکھیں جب تک اس تحریر کے آثار موجودہونگے ، فرشتے اس کے حق میں دعائیں کرتے رہیں گے۔

افضل کام ہدایت کرنا ، سب سے بڑاگناہ گمراہ کرنا ہے۔ حق کی بات کرنے والے کو بھی اتنا ہی ثواب ملتا ہے جتنا اس پہ عمل کرنے والے کو ملتا ہے ،نجات میں دو چیزوں کا کردارہے ،
۱۔ عقیدہ۲۔عمل ، عمل سے زیادہ حساس عقیدہ ہے جنت میں جانے کیلئے عقیدہ اور عمل کو دخل ہے، حساس عقیدہ ہے،نماز نہ پڑھنا جرم ہے، مرحوم پر مجلس کروانے کا فائدہ ہے مگر اس کی جتنی نمازیں